پاکستان

پیدائش اور موت کے سرٹیفکیٹ کی فیس میں 200 فیصد اضافہ کے خلاف تحریک التوائے کار پنجاب اسمبلی میں جمع

Written by Peerzada M Mohin

پیدائش اور موت کے سرٹیفکیٹ کی فیس میں 200 فیصد اضافہ کے خلاف تحریک التوائے کار پنجاب اسمبلی میں جمع کروادی گئی ۔مسلم لیگ (ن) کی رکن پنجاب اسمبلی رابعہ فاروقی کی جانب سے جمع کروائی گئی تحریک التواکار کے متن میں کہا گیا ہے کہ پنجاب حکومت کی جانب سے پیدائش اور موت کے سرٹیفکیٹ کی فیس میں 200 فیصد اضافہ کر دیا گیا ہے ۔سرٹیفکیٹ کی فیس 100 سے بڑھا کر 300 روپے مقرر کر دی گئی ہے۔اس مد میں پیدائش اور موت کی رجسٹریشن ک رولز 2021 کا نوٹیفکیشن جاری کر دیا گیا ہے۔ساٹھ دن سے دو سال تک تاخیر سے رجسٹریشن کی فیس دو ہزار روپے دو سال سے زائد تاخیر پر فیس پانچ ہزار روپے مقرر ہوئی ہے ۔غیر ملکی پیدائش پر فیس پانچ ہزار روپے موت کی تاخیر رجسٹریشن پر فیس پانچ ہزار روپے اور درستگی کروانے کی فیس ایک ہزار روپے مقرر ہوئی ہے۔پیدائش اور موت کے سرٹیفکیٹ کے حصول کے لئے رولز کے ساتھ چھ فارم بھی منسلک کئے گئے ہیں ۔موت کی تاخیر سے رجسٹریشن کی اجازت کے لئے کمیٹی تشکیل دی جائے گی ۔
٭٭٭٭٭

About the author

Peerzada M Mohin

M Shahbaz Aziz is ...

Leave a Comment

%d bloggers like this: