دنیا

‘ریپ میں ملوث’ فوجی اہلکار کے خلاف ٹوئٹ کرنے پر ترکش اداکارہ کے خلاف مقدمہ

Written by Peerzada M Mohin

کرد لڑکی کے ‘ریپ’ کے الزامات کی وجہ سے قانونی کارروائی کا سامنا کرنے والے ترک فوجی اہلکار کے خلاف ٹوئٹ کرنے پر معروف اداکارہ کے خلاف عدالت میں مقدمہ دائر کردیا گیا۔میڈیا رپورٹ کے مطابق معروف ترک اداکارہ ایزگی مولا کے خلاف دارالحکومت انقرہ کی پینل کورٹ میں فوجی اہلکار کی توہین کرنے کے الزام میں فوجداری مقدمے کی درخواست دائر کی گئی، جسے عدالت نے منظور کرلیا۔اداکارہ پر الزام ہے کہ انہوں نے اگست 2020 میں ترک فوجی موسیٰ ارہان کے خلاف اس وقت توہین ا?میز ٹوئٹ کی تھی، جب عدالتوں نے نہیں ضمانت پر رہا کردیا تھا۔عدالتوں کی جانب سے رہا کیے گئے فوجی اہلکار پر 18 سالہ کرد لڑکی کا 20 دن تک ‘ریپ’ کرنے کا الزام تھا۔فوجی اہلکار پر جس لڑکی کے ‘ریپ’ کا الزام تھا، اس نے جولائی 2020 میں خودکشی کی کوشش کی تھی، جس میں وہ سخت زخمی ہوگئی تھیں اور بعد ازاں اگست 2020 میں ہسپتال میں دم توڑ گئی تھیں۔خودکشی کرنے والی کرد لڑکی نے مرنے سے قبل لکھے گئے خط میں فوجی اہلکار موسیٰ ارہان پر 20 دن تک ‘ریپ’ کرنے کے الزامات لگائے تھے۔لڑکی کی خودکشی کے باوجود عدالتوں کی جانب سے فوجی اہلکار کو ضمانت پر رہا کرنے کے خلاف گزشتہ برس ترکی بھر میں مظاہرے بھی کیے گئے اور مذکورہ معاملے پر حزب اختلاف کی سیاسی جماعتوں نے بھی بھرپور آواز اٹھائی تھی ۔اسی دوران اداکارہ ایزگی مولا نے بھی رہا کیے جانے والے اہلکار کے خلاف ٹوئٹ کرتے ہوئے ان کی گرفتاری سے متعلق ہیش ٹیگ بھی استعمال کیا تھا، جسے بعد ازاں اداکارہ نے ڈیلیٹ کردیا تھا۔مذکورہ ٹوئٹ کے بعد اب فوجی اہلکار موسی ارہان کے وکلا نے اداکارہ کے خلاف فوجداری مقدمہ دائر کردیا اور اگر ان پر الزام ثابت ہوا تو انہیں دو سال 4 ماہ تک جیل قید کی سزا ہوسکتی ہے۔اداکارہ پر مقدمہ دائر ہونے کے بعد متعدد شوبز شخصیات نے ان کی حمایت کی مگر ان کی حمایت کرنے والی 16 شوبز شخصیات کے خلاف بھی مقدمہ دائر کروادیا گیا۔اپنے خلاف مقدمہ دائر ہونے اور شوبز شخصیات سمیت عام افراد کی جانب سے ساتھ دینے پر سب کا شکریہ ادا کرتے ہوئے ایک ٹوئٹ بھی کی، جس میں انہوں نے لکھا کہ انہیں یقین ہوگیا ہیکہ وہ ناانصافی کے خلاف بات کرنے والی تنہا نہیں ہیں۔
٭٭٭٭٭

About the author

Peerzada M Mohin

M Shahbaz Aziz is ...

Leave a Comment

%d bloggers like this: