دنیا

حوصلے سے فلوئیڈ قتل کی فلم بندی پر نوجوان صحافی کے لیے اعلی صحافتی ایوارڈکااعلان

جرنلزم پرائز بورڈ نے جارج فلوئیڈ کے موت کے منظر کو حوصلے سے فلمانے پر نوجوان ڈارنیلا فرازئیر کو اعلی ترین صحافی ایوارڈ پولِٹزر پرائز دینے کا اعلان کیا ہے۔میڈیارپورٹس کے مطابق ڈارنیلا فریزیئر نے اس وقت اپنے موبائل کے ذریعے فلم بندی کی تھی جب پولیس اہلکار نے سیاہ فام جارج فلوئیڈ کی گرد پر گھٹنا رکھا ہوا تھا اور جارج فلوئیڈ کو کہتے سنا جا سکتا تھا کہ وہ سانس نہیں لے پا رہے۔ اس ویڈیو کے منظرِعام پر آنے کے بعد امریکا سمیت دنیا بھر میں مظاہرے شروع ہو گئے تھے، جن میں نسل پرستی کے خاتمے کے لیے ٹھوس اقدامات کی ضرورت پر زور دیا گیا تھا۔ ڈارنیلا فریزیئر کے لیے پولٹزر پرائز کا اعلان کیا گیا۔ یہ ویڈیو ڈارنیلا فریزئیر نے مئی 2020 میں بنائی تھی۔پولٹزر پرائز بورڈ کے مطابق، “فلم بندی کے وقت فریزیئر کی عمر 17 برس تھی اور انہوں نے نہایت بہادری سے جارج فلوئیڈ کے قتل کی ریکارڈنگ کی۔ ایک ویڈیو جس نے دنیا بھر میں پولیس کے ظلم کو بے نقاب کیا اور سچ اور انصاف کے لیے عام شہریوں کے بہ طور صحافی ایک کردار کی اہمیت کو اجاگر کیا۔
٭٭٭٭٭٭

About the author

Peerzada M Mohin

M Shahbaz Aziz is ...

Leave a Comment

%d bloggers like this: