پاکستان

شاباش لینے آتا ہوں اور ڈانٹ پڑ جاتی ہے

ریلوے خسارہ کیس میں خواجہ سعد رفیق اور چیف جسٹس آف پاکستان کے درمیان دلچسپ مکالمہ ہوا، عدالت نے سابق وزیر ریلوے کو جواب جمع کرانے کیلئے ایک ماہ کی مہلت دے دی۔ سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں ریلوے خسارہ سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی۔ چیف جسٹس نے خواجہ سعد رفیق سے اسفسار کیا کہ کیا آپ نے آڈٹ رپورٹ دیکھی؟ خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ میرا الیکشن ہےمہلت دی جائے۔ چیف جسٹس نے خواجہ سعد رفیق کو اپنا رویہ درست کرنے کا کہا تو خواجہ صاحب بولے، یہاں بے عزتی کرانے نہیں آیا۔ چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ آپ کی کوئی بےعزتی نہیں کر رہا، خواجہ صاحب جو پوچھا جارہا ہے وہ بتائیں۔ خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ ہم نے ریلوے کو اپنے پاؤں پر کھڑا کیا، میں شاباش لینے آتاہوں آگے سے ڈانٹ پڑجاتی ہے۔ چیف جسٹس نے کہا کہ خواجہ صاحب آج تو آپ گھر سے ہی غصے میں آئے ہیں، خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ میں غصے میں نہیں آیا۔ جسٹس اعجازالاحسن نے خواجہ سعد رفیق کو ایک ماہ کی مہلت دیتے ہوئے کہا کہ جواب جمع کرائیں پھر دیکھتے ہیں شاباش ملتی ہے یا نہیں، آپ بےفکر ہو جائیں ناانصافی نہیں ہوگی۔

About the author

Peerzada M Mohin

M Shahbaz Aziz is ...

Leave a Comment

%d bloggers like this: