بولڈ خاتون کا مطلب بہادر اور خود مختار عورت ہے'عائشہ عمر

0

اداکارہ عائشہ عمر کو ہمیشہ کھری باتیں کرنے، سماجی مسائل اور خواتین کے حقوق پر بات کرتے ہوئے دیکھا جاتا ہے اور حال ہی میں انہوں نے اداکارہ میرا سیٹھی کے پروگرام میں بھی کھری کھری باتیں کیں۔اداکارہ عائشہ عمر نے حال ہی میں میرا سیٹھی کے یوٹیوب پروگرام میں شرکت کی، جہاں انہوں نے پہلی بار اپنی ذاتی زندگی سمیت زمانہ طالب علمی اور اپنے ساتھ ہونے والے حادثات سمیت سماجی مسائل پر بھی کھل کر بات کی۔عائشہ عمر نے انٹرویو کے دوران بتایا کہ جب وہ محض 2 سال کی تھیں تو ان کے والد انتقال کر گئے تھے اور ان کی والدہ کراچی سے لاہور شفٹ ہوگئیں اور وہیں انہوں نے ابتدائی تعلیم حاصل کی۔اداکارہ کے مطابق چوں کہ ان کی والدہ ایک استانی تھیں، اس لیے انہیں مہنگے اسکول میں پڑھانا مشکل تھا لیکن خوش قسمتی سے انہیں لاہور کے ایک مہنگے گرامر اسکول میں اسکالر شپ مل گئی۔عائشہ عمر کے مطابق انہوں نے بچپن میں سختیاں اور محرومیاں بھی دیکھیں اور انہوں نے کم آمدنی کی وجہ سے اسکالر شپ پر تعلیم مکمل کی اور بعد ازاں انہوں نے لاہور کے نیشنل کالج آف آرٹس (این سی اے) سے گریجوئیشن کیا۔عائشہ عمر نے ایک اور سوال کے جواب میں بتایا کہ ان کے مقبول ڈرامے بلبلے کی کامیابی کا راز ڈرامے کے چاروں کرداروں کا مسلسل کام کرنا ہے۔ان کے مطابق اگر مذکورہ ڈرامے میں دکھائی گئے چاروں مرکزی کرداروں میں سے کوئی ایک بھی کردار کام چھوڑ دے تو ڈراما بھی کمزور پڑ جائے گا۔انہوں نے بتایا کہ انہیں بلبلے کرتے ہوئے 11 سال ہوچکے ہیں اور وہ اس کی 600 تک قسطیں بنا چکے ہیں۔لباس پہننے کے حوالے سے پوچھے گئے ایک سوال کے جواب میں انہوں نے بتایا کہ وہ دوسروں کو متاثر یا خوش کرنے کے لیے لباس نہیں پہنتیں، البتہ تقریبات کو نظر میں رکھتے ہوئے کبھی کبھار اس مناسبت سے لباس ضرور پہنتی ہیں۔انہوں نے کہا کہ وہ ایسا لباس پہننے کو ترجیح دیتی ہیں جس میں وہ خود کو پرسکون اور آرام دہ محسوس کریں۔بولڈ خاتون کسے کہا جاتا ہے؟ کہ سوال کے جواب میں اداکارہ نے کہا کہ بولڈ خاتون کا مطلب بہادر اور خود مختار عورت ہے۔انہوں نے مزید وضاحت کی پدرشاہانہ نظام میں لوگوں کی کوشش ہوتی ہے کہ خاتون اپنی رائے نہ رکھے، وہ بہادر نہ ہو اور اپنی مرضی سے فیصلے نہ کرتی ہو۔عائشہ عمر کے مطابق پدرشاہانہ سماج میں لوگوں کا خیال ہے کہ ایک عورت یا لڑکی کو سہما ہوا ہونا چاہیے، اسے انفرادی طور پر مضبوط نہیں ہونا چاہیے، اس لیے بعض لوگ بہادر اور خود مختار عورت کو بولڈ کہتے ہیں۔عائشہ عمر کا انٹرویو دو حصوں میں نشر کیا گیا، جس میں سے پہلے حصے کو 12 جنوی کو ریلیز کیا گیا۔
٭٭٭٭٭

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

Subscribe For Latest Updates

Signup for our newsletter and get notified when we publish new articles for free!




%d bloggers like this: