دنیا

تنقید کے بعد فرانسیسی فیشن برانڈ نے فلسطینی رومال کی فروخت بند کردی

Written by Peerzada M Mohin

عرب مورخ اور لوگوں کی تنقید کے بعد معروف فرانسیسی فیشن برانڈ لوئی وٹون (ایل وی) نے دنیا بھر میں مزاحمت کی علامت بن جانے والے فلسطینی رومال کی فروخت بند کردی۔لوئی وٹون نے چند دن قبل اپنی ویب سائٹ پر فلسطینی رومال فروخت کیلئے پیش کیا تھا۔لوئی وٹون نے دنیا بھر میں اور خصوصی طور پر فلسطین کی حمایت کرنے والے افراد میں مزاحمت کی علامت بن جانے والے مذکورہ رومال کی فروخت حال ہی میں ایسے وقت میں شروع کی جب کہ گزشتہ ماہ مئی میں اسرائیل نے فلسطینیوں پر حملے کیے۔فلسطینی رومال خصوصی طور پر مسلم دنیا اور ان افراد میں مزاحمت کی علامت سمجھا جاتا ہے جو فلسطین کی حمایت کرتے ہیں۔عام طور پر مذکورہ رومال پاکستانی ایک سے ڈیڑھ ہزار روپے میں مل جاتا ہے لیکن فرانسیسی فیشن ہائوس نے اسے پاکستانی تقریبا ایک لاکھ 10 ہزار روپے کی قیمت تک فروخت کیلئے پیش کیا تھا۔فرانسیسی فیشن برانڈ کو جہاں دیگر لوگوں نے تنقید کا نشانہ بنایا تھا کہ وہ خود کو غیر سیاسی قرار دیتے ہیں مگر ان کی جانب سے فلسطینی رومال کی فروخت کا عمل ثابت کرتا ہے کہ وہ غیر سیاسی نہیں۔لوگوں کی تنقید کے بعد لوئی وٹون نے اپنی ویب سائٹ سے فلسطینی رومال کی فروخت کا صفحہ ہٹا دیا اور اس کی تصدیق پروفیسر خالد بدیون نے بھی کی۔
٭٭٭٭٭

About the author

Peerzada M Mohin

M Shahbaz Aziz is ...

Leave a Comment

%d bloggers like this: